Home > Siasi Videos > مریم نواز کی عوام سےایک بار پھر غلط بیانی ، بلف کھیلنے کی کوشش

مریم نواز کی عوام سےایک بار پھر غلط بیانی ، بلف کھیلنے کی کوشش

Advertisement

 

 

مریم نواز نے آج پریس کانفرنس میں جج ارشد ملک کی ویڈیو لیک کی ،ا س پر ایک ٹوئٹر فرینڈ اظہر نے دلچسپ ٹویٹس کئے جنہیں دیکھ کر خیال آیا کہ کیوں نہ اسے کالم کی شکل دی جائے۔۔ جج ارشد ملک نے نواز شریف کے دو کیسز کے فیصلے دئیے

العزیزیہ ریفرنس = 7 سال سزا کیونکہ العزیزیہ سے 1 ارب سے زیادہ نواز شریف کو آئے تھے

فلیگ شپ = بری ہوا کیونکہ حسن نواز کی پراپرٹیز میں نواز شریف کی ملکیت ثابت نہیں ہوئی تھی

ویڈیو میں جج ناصر بٹ سے فلیگ شپ کیس ہی ڈسکس کر رہا ہے۔ مریم نواز نے یہ ویڈیو لیک کروا کر بلف کھیلنے کی کوشش کی اور پھر پھنس گئی ۔ نوازشریف کو ایسی بیٹی کے ہوتے ہوئے ددشمنوں کی ضرورت نہیں ہے۔ مریم نواز نے ایک بار پھر نہ صرف عدلیہ بلکہ فوج سمیت ملکی اداروں پر حملہ کرنے کی کوشش کی ہے جس کی وجہ سے فوج اور اسٹیبلشمنٹ کیلئے ہمیشہ کیلئے ہمدردیاں ختم ہوجائیں گی۔

مریم نواز نے یہ حرکت کرکے کئی سوالات کھڑے کردئیے ہیں۔ پہلا سوال یہ کہ ن لیگ کا رہنما ناصر بٹ جج ارشد ملک کے پاس لینے کیا گیا ہے؟ کیا کوئی شخص اس طرح جج سے مل سکتا ہے اور آڈیو، ویڈیو ریکارڈ کرسکتا ہے؟ دوسرا کیا ناصر بٹ نے جج ارشد ملک کو ایسا بولنے کیلئے رشوت آفر کی؟ تیسرا اگر نوازشریف بے گناہ تھا تو بار بار منی ٹریل مانگنے پر کیوں منی ٹریل نہیں دی؟ چوتھا اگر نوازشریف اور اسکے بچے معصوم تھے تو پاکستان آکر کیوں حسن اور حسین نے سامنا نہیں کیا؟ چوتھا اہم سوال وہاں بیٹھا تیسرا شخص کون تھا اور اسے ویڈیو ریکارڈ کرنے کی اجازت کیوں دی گئی؟

آخر میں مریم نواز نے ایک اور بات کہی کہ آڈیو اور ویڈیو علیحدہ علیحدہ ریکارڈ کی گئی ہے۔ دوسرے الفاظ میں مریم نواز کے کہنے کا مطلب یہ ہے کہ یہ ویڈیوہی جعلی اور غیر واضح ہے اس پر

 

یقین نہ کیا جائے۔۔ آڈیو اور ویڈیو علیحدہ علیحدہ کیسے ریکارڈ کی گئی ؟ کیا مریم نواز کبھی اس پر روشنی ڈالیں گی؟

 

Advertisement